خدا کی پناہ ….

پروفیسر صاحب دوپہر سے رات گئے تک ایک صاحب کے گھر میں بیٹھے باتیں کرتے رہے . آخرکار میزبان بولا ،

مجھے کہتے ہوۓ اچھا تو نہیں لگتا لیکن مجھے صبح اٹھ کر اسلام آباد کے لیے فلائٹ پکڑنی ہے . آیے میں آپ کو دروازے تک چھوڑنے چلوں

” خدا کی پناہ ….” پروفیسر صاحب یک دم گھبرا کر کھڑے ہو گے . میں تو یہی سمجھ رہا تھا کہ تم مجھ سے ملنے میرے گھر آے ہو

ہا ہا ہا ہا ہا …….

0