حاجی کا ادھار

shopkeeper jokes in urdu

ایک صاحب  حج کر کے آے ، آتے ہی دکاندار کے پاس آے اور کہا ، کھاتا دکھاؤ میرا

دکاندار نے جلدی سے ٹوٹل بتا دیا یہ سوچ کر کہ برسوں پرانا ادھار ہے ، میاں صاحب حج کر کے آے ہیں سب کلیر کر دیں گے

جب کھاتا سامنے آیا تو میاں صاحب نے کہا ، جدھر جدھر میرا نام ہے اس کے ساتھ حاجی لکھ دو

ہا ہا ہا ……….

وہ کون تھی

“کل بازار میں تم جس حسین اور سمارٹ لڑکی کے ساتھ گھوم رہے تھے، وہ کون تھی؟”

ایک شخص نے اپنے آفس کے ساتھ سے پوچھا

“اگر تم وعدہ کرو کہ یہی الفاظ تم میری بیوی کے سامنے نہیں دوہراؤ گے تو بتا دیتا ہوں “

ساتھی نے کہا ” ٹھیک ہے وعدہ رہا “

“وہ میری بیوی ہی تھی ” اس نے منه بسورتے ہوے جواب دیا

ہا ہا ہا ہا ہا …….

ویلے ملازم

گھر میں سیٹھ صاحب نے اپنے ایک نوکر کو آواز دی

“رشید ! تم کہاں ہو “

“صاحب جی! میں یہاں لاؤنج میں ہوں ” رشید کی آواز آئ .

“کیا کر رہے ہو ؟” سیٹھ صاحب نے پوچھا

“کچھ نہیں صاحب جی !” رشید نے  صاف گوئی کا مظاہرہ کیا

تب سیٹھ صاحب نے دوسرے نوکر کو آواز دی.

” نزیر ! تم کہاں ہو ؟”

” صاحب جی میں لاؤنج میں ہوں” نذیر کی آواز آئ

” تم کیا کر رہے ہو ” سیٹھ صاحب نے غصے سے پوچھا

” میں رشید کا ہاتھ بٹا رہا ہوں، صاحب جی ” نذیر نے جواب دیا

ہا ہا ہا ہا ہا …….

پپو بیٹااور باس کی  خودکشی

funny office jokes in urdu

باس نے ایک بہت ہی خوبصورت سیکرٹری کو کام پر رکھا ، مگر دس دن بعد ہی باس نے ستائسویں منزل سے آفس سے کود کر خودکشی کر لی

انسپکٹر,  اُس وقت کمرے میں کون تھا

سیکرٹری,  جی میں تھی

انسپکٹرسیکرٹری کی طرف محبت بھری نظروں سے دیکھتے ہوۓ بولا, آخر ہوا کیا تھا؟

وہ بہت اچھے انسان تھے ایک دن انہوں نے مجھے دو لاکھ کا لباس تحفے میں دیا ، پھر ایک دن انہوں نے مجھے پندرہ لاکھ کا ہیروں کا ہار لے کر دیا ، پرسوں ہی وہ میرے لیے دس لاکھ کی ہیرے کی انگوٹھی لے کر آے تھے ، “یہ دیکھو میری انگلی میں”

انسپکٹر,  پھر؟

سیکرٹری,  کل انہوں نے مجھے شادی کے لیے پروپوز کیا تھا

انسپکٹر,  تو

سیکرٹری,  تب میرے پاپا کا فون آیا ، میں نے کہا بابا آپ یہاں ہوتے تو دیکھتے میرے باس مجھے کتنا پسند کرتے ہیں ، آپ تو ہمیشہ یوں ہی کہتے تھے

“پپو بیٹا ، لڑکی بن کر مت گُھوما کر”

ملازم اور افسر

office humour

ملازم اور افسر
ایک ملازم آفس میں بیٹھا رو رہا تھا . اسی وقت اس کا افسر آ گیا اور ملازم سے پوچھا ” رو کیوں رہے ہو ”
ملازم ‘  سر مجھے “بیوی” نے مارا ہے
افسر ‘  بے وقوف رویا نہیں کرتے . تم نے مجھے کبھی روتے ہوے دیکھا ہے 

گدھا اور کلرک

گدھا اور کلرک
ایک آدمی کے گھر کے سامنے گدھا مر گیا . اس نے بلدیہ والوں کو فون کیا کہ وہ اسے اٹھا لیں . متعلقہ کلرک نے کہا کہ ہم نے گدھے کا کیا کرنا ہے اسے وہیں کسی جگہ دفنا دیں.
آدمی کچھ دیر تک خاموش رہا پھر جل کر بولا. جناب ! میں پہلے ہی دفنا دیتا پھر سوچا کہ پہلے اس کے خاندان والوں کو اطلاع کر دوں تاکہ وہ اس کا آخری دیدار کر لیں.

! چالاک ملازم

ملاقاتی ! تمھارے صاحب گھر پر ہیں ؟ میں نے ایک بل…
ملازم ! صاحب کل شام شہر سے باہر گئے تھے….
ملاقاتی ! میں نے بل کے ادائیگی کرنی تھی…
ملازم ! ہاں. صاحب آج صبح سویرے واپس آ گۓ ہیں. میں ابھی اطلاع کرتا ہوں
!!!🤣😂🤣😂